خبریں

سوات،مسائل حل نہ ہوئے تو یکم اگست سے تحریک شروع کرینگے، صدر محبوب علی

سوات ( سوات نیوز) سوات پریس کلب اور صحافیوں کے خلاف انتقامی کاروائیاں بند کی جائیں، چار سالوں سے بند سوات پریس کلب کا گرانٹ بحال کیا جائے، میڈیا کالونی پر عملی کام کا اغاز کیا جائے، صحافیوں کے مسائل حل نہ ہونے پر یکم اگست سے احتجاجی تحریک کا اعلان کردیا گیا، اس سلسلے میں گزشتہ روز سوات پریس کلب، یونین آف جرنلسٹس، گورننگ باڈی اور سوات الیکٹرانکس میڈیا ایسوسی ایشن کے جنرل باڈی کا اہم اجلاس زیر صدارت چیئرمین محبوب علی ہوا، جس میں صوبائی حکومت کی جانب سے سوات پریس کلب کے صحافیوں کے خلاف انتقامی کاروائیوں پر شدید افسوس کا اظہار کیا گیا اور کہا کہ سوات کے صحافیوں کے خلاف گزشتہ چار سالوں سے انتقامی کاروائیاں جاری ہے، اور مختلف اداروں کو صحافیوں کو اخبارات اور ٹی وی چینلز سے نکالنے کے لئے دباؤ ڈالا جارہا ہے اور اس سلسلے میں سینئر صحافی شہزاد عالم کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنا کر ادارے سے فارغ کیا گیا جس کی پر زور الفاظ میں مذمت کی گئی، مقامی اخبارات کو بھی سیاسی انتقام کا نشانہ بنانے اور اپنے من مانے بیانات شائع نہ کرکے پاداش میں اشتہارات کی بندش پر بھی غم و غصے کا اظہار کیا گیا، اس موقع پر سوات کے صحافیوں کے لئے اعلان کردہ سوات میڈیا کالونی کا باقاعدہ سنگ بنیاد رکھنے کے باوجود عملی کام کا آغاز نہ ہونے پر بھی افسوس کا اظہار کیا گیا جبکہ گزشتہ چار سالوں سے پریس کلب کی گرانٹ کی بندش اور خپل وزیراعلیٰ ہونے کے باوجود مراعات سے محروم رکھنے کو صحافیوں کے حقوق پر ڈاکہ قرار دیا گیا، جنرل کونسل کے اہم اجلاس میں سوات کے صحافیوں کے ساتھ ظالمانہ روایہ اور زد کوب اور انتقام کا نشانہ بنانے پر سخت تشویش کا اظہار کرتے ہوئے قرارداد پاس کی گئی کہ اگر 31جولائی تک صحافیوں کے مسائل حل نہ ہوئے اور ان کے خلاف کاروائیاں بند نہ کی گئی تو پورے ملک میں صحافتی تنظیموں اور انسانی حقوق کے تنظیموں سے مل کر بھر پور احتجاجی تحریک کا آغاز کیا جائیگا جس کے لئے مختلف کمیٹیاں تشکیل دی گئی۔

8 total views, 8 views today

Show More

Related Articles

جواب دیں

Back to top button
Close
Close

Adblock Detected

Please consider supporting us by disabling your ad blocker